Posted in Uncategorized

کالا موتیا ایک مہلک مرض

March 12, 2014   جویریہ صدیق…
آنکھیں انسان کی شخصیت کا اہم حصہ ہیں۔ آنکھوں کی ہی مدد سے انسان روزمرہ معمولات بخوبی انجام دے پاتا ہے۔جس قدر یہ کارآمد ہیں اتنی ہی نازک بھی اور دیکھ بھال بھی مانگتی ہیں لیکن پاکستانی عوام عام طور پر صرف اس ہی وقت ماہر امراض چشم کا رخ کرتے ہیں جب تک کہ آنکھوں کا درد ان کو بے چین نہ کردے۔یہ بہت غلط ہے کہ ڈاکٹر کے پاس صرف اس ہی وقت جایا جائے جب درد ہمیں بے قرار کردے۔ ہمیں سال میں کم از کم دو بار اپنی آنکھوں کا معائنہ کروانا چاہے تاکہ مختلف امراض چشم سے بچا جا سکے۔ آنکھوں کی بہت سی بیماریاں عام ہیں جن میں نظر کی کمزوری، بھینگا پن، پردہ بصارت کا متاثر ہونا، آنکھوں کی الرجی، سفید موتیا اور کالا موتیا قابل ذکر ہیں۔ ان سب میں سب سے مہلک بیماری گولکوما یعنی کالا موتیا ہے۔ اس بیماری کے حوالے سے ہیں دنیا بھرمیں 9 سے 15مارچ کو اس کی آگا ہی کا ہفتہ منایا جاتا ہے۔ اندھے پن کی بڑی وجہ یہ بیماری کالا موتیا ہی ہے۔ موتیا اور ذیابیطس سے ہونے والے اندھے پن کے 70فیصد واقعات کو جلد تشخیص اور موزوں علاج سے قابو کیا جاسکتا ہے۔

قدرت کی طرف سے آنکھوں میں خوراک کی فراہمی ایک نظام بنایا گیا جس کے تحت ایک خاص مواد خون سے بن کر آنکھوں میں آتاہے اورایک خاص دباوٴ کے ساتھ آنکھوں میں رہتا ہے اورپھر واپس چلا جاتا ہے لیکن اگر یہ دباوٴ ایک مقررہ حد سے بڑھ جائے اور مواد واپس نہ جائے تو یہ نظر کے لیے نقصان دہ ہوتا ہے اور کیفیت کو گلوکوما یعنی کالا موتیا کہتے ہیں۔ عام طور پر آنکھوں کا دباوٴ 20سے نیچے ہوتا ہے تاہم اس بیماری میں یہ 40سے 50ایم ایم ایچ جی تک پہنچ جاتاہے۔ اس کی عام علامتوں میں آنکھوں میں درد، سر درد، نظر میں کمی، سر کابھاری ہونا، چکر آنا، آنکھوں کا سرخ ہونا اوردھندلاپن شامل ہے، ان علامتوں کی صورت میں فوراً ڈاکٹر سے رجوع کرنا چاہیے کیونکہ اگر کالا موتیا کی علاج فوری طور پر نہ شروع کیا جائے تو بینائی جانے کا اندیشہ ہوتا ہے۔ اس بیماری کا علاج اب ممکن ہے، دوائی اور لیزر کے ذریعے سے اس بیماری پر قابو پایا جاسکتا ہے، لیکن اس بیماری کی سب سے خطرناک بات یہ ہے علامتیں جب ظاہر ہوتی ہیں جب بینائی کا بہت نقصان ہوگیا ہوتا ہے۔

دنیا بھر میں دستیاب اعداد و شمار کے مطابق 70لاکھ افراد اس مرض کی وجہ سے اپنی بینائی کھو چکے ہیں جبکہ پاکستان میں نابینا افراد کی تعداد 12لاکھ کے قریب ہے۔ جن افراد کو شوگر اور بلڈ پریشر کا عارضہ لاحق ہے ان کو موتیا کی بیماری میں لاحق ہونے کا امکان قدرے زیادہ ہے۔ اس بیماری کی خطرناک بات یہ ہے کہ اس کی علامتیں بہت دیر بعد ظاہر ہوتی ہیں، اس لیے ماہرامراض چشم سے متواتر معائنہ ضروری ہے۔ اس کے علاج میں سب سے پہلے جو چیز کنٹرول کی جاتی ہے وہ ہے آنکھوں کا پریشر یعنی دباوٴ، یہ لازمی طور پر 21ایم ایم ایچ جی سے کم ہونا چاہیے۔ علاج کے دوسرے مرحلے میں ڈاکٹر کی یہ کوشش ہوتی ہے کہ بینائی کو اور کم ہونے سے روکا جاسکے۔ اس کے بعد سرجری یا لیزر کا آپشن بھی استعمال کیا جاتاہے۔

ماہر امراض چشم ڈاکٹر عرفان اللہ کنڈی کے مطابق یہ مرض کسی کو بھی لاحق ہوسکتا ہے لیکن اگر خاندان میں یہ مرض موجود ہے تو پھر دیگر اہل خانہ کو بھی اپنی آنکھوں کا معائنہ کروانا چاہیے کیونکہ یہ دیگر اہل خانہ کو ہونے کا قوی امکان ہے۔ ان کے مطابق اب اس کا علاج موجود ہے، فیوگو پلازما بلیڈ کے ذریعے اس مرض پر قابو پایا جاسکتا ہے، یہ علاج کم وقت میں بنا تکلیف کے مریض کی بینائی کو متاثر ہونے سے روک دیتا ہے۔ ڈاکٹر کنڈی کے مطابق آنکھوں کو ہر وقت صاف رکھنا چاہیے اور اگر ہر دو سے تین گھنٹے بعد آنکھوں کو سادہ پانی سے دھو لیا جائے تو معتدی امراض سے بچا جا سکتا ہے۔ اگر آنکھوں میں درد ہو یا دباوٴ محسوس ہو تو فورا ڈاکٹر سے رجوع کریں اور 30سال کی عمر کے بعد اپنا متواتر معائنہ کروائیں۔

9تا15مارچ کالے موتیے کے حوالے سے آگاہی کا ہفتہ منایا جاتا ہے، اس ضمن حکومت اور محکمہ صحت کو عوام کے لیے فری کمیپ لگانے چاہئیں تاکہ اس مرض پر قابو پایا جاسکے۔ پاکستان میں 20لاکھ کے قریب کالا موتیا میں مبتلا مریض ہیں اس لیے ارباب اختیار کو اس بیماری کے حوالے سے آگاہی اور روک تھام کے لیے ٹھوس اقدامات کرنے کی فوری ضرورت ہے۔
Javeria Siddique is a Journalist and Award winning photographer.

Contact at https://twitter.com/javerias  

– See more at: http://blog.jang.com.pk/blog_details.asp?id=9642#sthash.bjtxkctC.dpuf

Advertisements

Author:

Journalist writes for Turkish Radio & Television Corporation . Photographer specialized in street and landscape photography Twitter @javerias fb: : https://www.facebook.com/OfficialJaverias

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s